انکا ؔ۔ جنوبی امریکہ کا ایک قدیم قبیلہ

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 21 جون 2012ء میں جنوبی امریکہ کے قدیم قبیلے انکاؔ (Inca) کا تعارف اور طرز بودباش سے متعلق معلومات پیش کی گئی ہیں۔ بحرالکاہل کے کنارے پر آباد یہ جنوبی امریکہ کا ایک قدیم قبیلہ ہے جس کے لوگ 11ویں صدی عیسوی میں جنوب مشرق کی طرف سے پیرو (Peru) میں داخل …مزید پڑھیں

حضرت خلیفۃالمسیح الخامس ایدہ اللہ کا تاریخی انٹرویو

مجلس خدام الاحمدیہ یو کے کو صدسالہ خلافت جوبلی 2008ء کے موقع پر حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ بنصرہ العزیز کا ایک تاریخی انٹرویو کرنے کی سعادت حاصل ہوئی جو قریباً تین گھنٹہ دورانیہ پر مشتمل تھا۔ انٹرویو پینل مکرم صاحبزادہ مرزا فخر احمد صاحب، مکرم طارق احمد بی ٹی صاحب ، مکرم …مزید پڑھیں

جماعت احمدیہ کریباتی (پیسفک) کے قیام کے تیس سال بعد پہلے دو روزہ تاریخی جلسہ سالانہ 2017ء کا بابرکت انعقاد

2017ء کے تاریخی سال میں جزائرکریباتی کی پہلی مسجد اور مشن ہاؤس کی تعمیر بھی مکمل ہوئی۔ جلسہ سالانہ میں کریباتی کے صدر کے نمائندہ سمیت کُل 242 افراد کی شمولیت۔ علماء کرام کی تقاریر اور دروس کے ذریعہ تربیتی مساعی۔ نمائش کے ذریعہ اسلامی تعلیمات کی تبلیغ۔ (رپورٹ: خواجہ فہد احمد مبلغ سلسلہ۔ انگریزی …مزید پڑھیں

صحرائے اعظم افریقہ

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 30؍مئی 2012ء میں دنیا کے سب سے بڑے ریگستان ’’صحارا‘‘ کا تعارف شائع ہوا ہے۔ 86لاکھ مربع کلومیٹر پر پھیلا ہوا صحرائےاعظم دس افریقی ملکوں میں منقسم ہے جو مراکش، تیونس، لیبیا، مصر، سوڈان، الجزائر، چاڈ، نائیجر، مالی اور ماریطانیہ ہیں۔ اس بے آب و گیاہ بنجر زمین میں چند نخلستان بھی …مزید پڑھیں

حاصل مطالعہ (مسیحؑ بلادِشرقیہ میں + بنگال کے متعلق ایک پیشگوئی)

حاصل مطالعہ فرخ سلطان محمود (مطبوعہ رسالہ انصارالدین مئی جون 2014ء) آج کے کالم میں ’’مضامینِ شاکر‘‘ سے ایک تحریر بھی ہدیۂ قارئین ہے: مسیحؑ بلادِشرقیہ میں جب حضرت مسیح موعودعلیہ السلام نے خداتعالیٰ سے خبر پاکر حضرت مسیح ناصری علیہ السلام کی وفات کی خبردی تو پرانی ڈگر کے لوگوں نے طوفانِ مخالفت اُٹھایا …مزید پڑھیں

غانا میں احمدیت کا آغاز

قریباً1870ء میں غانا کے ایک میتھوڈیسٹ پریسٹ بنجامین سام نے ایک شخص ابوبکر بن صدیق کے ہاتھ پر اسلام قبول کرلیا اور قبولِ اسلام کے بعد وہ بن یامین کہلانے لگے۔ جلد ہی انہوں نے اپنے ایک قریبی دوست کو بھی مسلمان بنالیا جس کا اسلامی نام مہدی رکھا گیا۔ بن یامین نے اپنے علاقہ …مزید پڑھیں

ماریشس میں احمدیت

جامعۃ المبشرین ربوہ میں 2 دسمبر 1955ء کو ایک خصوصی تقریب منعقد ہوئی جس کی رپورٹ ایک پرانی اشاعت سے روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 3 مارچ 1997ء میں منقول ہے۔ اس تقریب میں ماریشس کے جن مہمانوں نے شرکت کی ان میں محترم محمد عظیم سلطان غوث صاحب بھی شامل تھے جو ان تین خوش قسمت …مزید پڑھیں

ایک نئی مملکت کا نام

ماہنامہ ’’اخبار احمدیہ‘‘ برطانیہ مارچ،اپریل 1995ء کے انگریزی حصہ میں یہ دلچسپ خبر شائع ہوئی ہے کہ ایک احمدی نے 1964ء میں دنیا میں قائم ہونے والی ایک نئی مملکت کا نام تجویز کیا تھا۔ یہ مملکت دو ممالک ٹانگانیکا اور زنجبار کے ادغام سے قائم ہوئی تھی۔ نام تجویز کرنے کے لئے ایک عالمی …مزید پڑھیں

افریقہ کی ایک قدیم سلطنت – غنا

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 21؍اکتوبر 1996ء میں مکرم نسیم سیفی صاحب نے مغربی افریقہ میں ایک قدیم سلطنت کے آثار کا ذکر کیا ہے جس کا نام سلطنت ’’غنا‘‘ تھا اور جو اپنی خوشحالی اور سونے کی افراط کی وجہ سے سنہری سلطنت کہلاتی تھی۔ آج سے تقریباً دو ہزار سال پہلے سلطنت غنا قائم ہوئی …مزید پڑھیں

ہنگری

ہنگری ایک ایسا ملک ہے جسے کوئی سمندر میسر نہیں۔ روسی گھڑسوار خانہ بدوش قوم Magyars نے 896ء میں اس کے کچھ علاقہ پر قبضہ کر کے ہنگری مملکت کی بنیاد ڈالی۔ سولہویں صدی میں ترکوں نے اس پر قبضہ کرلیا اور 1699ء میں آسٹرین اس ملک پر قابض ہوگئے لیکن کچھ عرصہ بعد مقامی …مزید پڑھیں

ماریشس

جزیرہ ماریشس کا رقبہ صرف گیارہ سو مربع میل ہے۔ مؤرخین کے مطابق ماریشس اور ہمسایہ جزیرہ مڈغاسکر کو ساتویں صدی میں عربوں نے دریافت کیا اور اِن کے نام بالترتیب ’’اروبی‘‘ اور ’’قمری‘‘ رکھے لیکن ویران ہونے کی وجہ سے اس کی طرف زیادہ توجہ نہ کی۔ 1507ء میں ایک ڈَچ جہاز ران نے …مزید پڑھیں

البانیہ

روزنامہ ’’الفضل‘‘ 21؍اگست 1995ء میں یورپ کے پسماندہ ملک البانیہ کے بارے میں ایک مضمون مکرم محمد محمود طاہر صاحب کے قلم سے شائع ہوا ہے۔ البانیہ کی لمبائی 207 میل اور 50 میل کے درمیان ہے اور کثیر تعداد میں جھیلیں اور دریا اسے قدرتی حسن سے مالا مال کئے ہوئے ہیں۔ یہاں کی …مزید پڑھیں

جمہوریہ ازبکستان

جمہوریہ ازبکستان کی آبادی قریباً دو کروڑ ہے اور یہاں ایک سو سے زیادہ قومیتوں کے لوگ آباد ہیں۔ مسلمانوں کا تناسب 80 فیصد ہے۔ دارالحکومت تاشقند ہے اور سمرقند ملک کا دوسرا بڑا شہر ہے۔ اس علاقہ میں کئی عظیم مسلمانوں نے جنم لیا ہے۔ …روس کی 60 فیصد کپاس ازبکستان میں پیدا ہوتی …مزید پڑھیں