محترم خاور ایوب صاحب شہید

ماہنامہ ’’تشحیذالاذہان‘‘ ربوہ اپریل 2011ء میں عزیزم عبدالباسط نے اپنے والد محترم خاور ایوب صاحب کا ذکرخیر کیا ہے جو 28؍مئی 2010ء کو سانحہ لاہور میں شہید کردیئے گئے۔ محترم خاور ایوب صاحب بھیرہ (ضلع سرگودھا) میں پیدا ہوئے اور وہیں سے میٹرک تک تعلیم حاصل کی۔ گریجوایشن لاہور سے کی۔ لاہور میں اپنے ایک …مزید پڑھیں

کیپٹن ریٹائرڈ مرزا نعیم الدین صاحب شہید

ماہنامہ ’’تشحیذالاذہان‘‘ اکتوبر 2011ء میں مکرم مرزا شہباز احمد نے اپنے تایا کیپٹن مرزا نعیم الدین صاحب کا ذکرخیر کیا ہے جنہیں 28؍مئی 2010ء کو سانحہ دارالذکر لاہور میں شہید کردیا گیا۔ محترم مرزا نعیم الدین صاحب 1953ء میں فتح پور ضلع گجرات میں پیدا ہوئے۔ پانچ بہن بھائیوں میں چوتھے نمبر پر تھے۔ تین …مزید پڑھیں

مکرم نعمت اللہ صاحب شہید نارووال

ماہنامہ ’’تشحیذالاذہان‘‘ ستمبر 2011ء میں عزیزم ذیشان نعمت اللہ نے اپنے والد مکرم نعمت اللہ صاحب کا ذکرخیر کیا ہے جنہیں نارووال میں رات کو اُن کے گھر میں حملہ کرکے شہید کردیا گیا۔ مکرم نعمت اللہ صاحب 1956ء میں پیدا ہوئے۔ آپ کے دادا محترم میاں چراغ دین صاحب نے آپ کا نام نعمت …مزید پڑھیں

ہماری ماؤں بہنوں کے اُجاڑ کر سہاگ تُو – نظم

ماہنامہ ’’انصاراللہ‘‘ ربوہ اکتوبر 2011ء میں مکرم عبدالسلام اسلام صاحب کی سانحہ لاہور کے حوالہ سے ایک نظم بعنوان ’’تنبیہ بحق ظالم‘‘ شامل اشاعت ہے۔ اس نظم میں سے انتخاب پیش ہے: ہماری ماؤں بہنوں کے اُجاڑ کر سہاگ تُو مُسرّتوں کے تال پر نہ گا خوشی کے راگ تُو نگاہِ ’ذُونْتِقَام‘ ہے ہمیشہ تیری …مزید پڑھیں

جنرل ناصر احمد چودھری صاحب شہید

(مطبوعہ الفضل انٹرنیشنل 25 اکتوبر 2019ء) ماہنامہ ’’انصاراللہ‘‘ ربوہ ستمبر 2011ء میں سانحہ لاہور میں شہادت پانے والے جنرل چودھری ناصر احمد صاحب کے بارے میں ایک مضمون اُن کے کزن مکرم کرنل انتصار احمد مہار صاحب کے قلم سے شائع ہوا ہے۔ پاکستان بننے سے قبل ہی محترم چودھری صاحب جڑانوالہ کے ایک گاؤں …مزید پڑھیں

محترم ماسٹر غلام محمد صاحب شہید اورحضرت چودھری بدر دین صاحب شہید

(مطبوعہ الفضل انٹرنیشنل 25 اکتوبر 2019ء) ماہنامہ ’’خالد‘‘ ربوہ جون 2011ء میں مکرم نوید احمد انور صاحب کے قلم سے دو شہداء کا ذکرخیر شامل اشاعت ہے۔ محترم ماسٹر غلام محمد صاحب اوکاڑہ کے نواح میں ایک دیہاتی سکول میں ٹیچر تھے۔ آپ یکم اکتوبر 1950ء کو چند دیگر احمدیوں کے ساتھ تبلیغ کے لیے …مزید پڑھیں

مکرم مقصود احمد صاحب شہید آف ربوہ

روزنامہ الفضل ربوہ 12 مارچ 2012ء میں مکرم مقصوداحمد صاحب آف ربوہ کی شہادت کی خبر شائع ہوئی ہے۔ آپ مکرم محمد ادریس صاحب آف کرونڈی ضلع خیرپور کے بیٹے تھے۔ 7مارچ 2012ء کی سہ پہر آپ کو نوابشاہ کے بازار میں دو نامعلوم موٹرسائیکل سواروں نے فائرنگ کرکے شہید کردیا۔ تدفین ربوہ میں ہوئی۔ …مزید پڑھیں

مکرم ماسٹر راجہ ضیاء الدین جنجوعہ صاحب شہید

روزنامہ الفضل ربوہ 28مارچ 2012ء میں مکرم لطیف احمد صاحب کے قلم سے مکرم راجہ ضیاء الدین جنجوعہ صاحب شہید کا ذکرخیر شامل اشاعت ہے۔ مضمون نگار بیان کرتے ہیں کہ خاکسار 1950ء میں تعلیم الاسلام ہائی سکول چنیوٹ کی پانچویں جماعت میں داخل ہواتو اس کے انچارج محترم راجہ ضیاء الدین جنجوعہ صاحب تھے۔ …مزید پڑھیں

مکرم چوہدری محمد اکرم صاحب شہید آف نوابشاہ

روزنامہ الفضل ربوہ 5 مارچ 2012ء میں مکرم چودھری محمد اکرم صاحب ابن مکرم محمد یوسف صاحب کی شہادت کی خبر شائع ہوئی ہے جنہیں نوابشاہ میں 29 فروری 2012ء کی دوپہر گھر کے نزدیک ہی موٹر سائیکل پر سوار دو نامعلوم افراد نے فائرنگ کرکے شدید زخمی کردیا اور آپ ہسپتال کے راستہ میں …مزید پڑھیں

خون میں جو نہا کے آئے ہیں – نظم

(مطبوعہ الفضل ڈائجسٹ 11 اکتوبر 2019ء) ماہنامہ ’’مصباح‘‘ ربوہ مارچ 2011ء میں شہدائے لاہور کے حوالے سے شائع ہونے والی ایک نظم میں سے انتخاب ہدیۂ قارئین ہے: خون میں جو نہا کے آئے ہیں کیسا درجہ کما کے آئے ہیں معتبر ہے ہر ایک زخم کہ یہ راہِ مولیٰ میں کھا کے آئے ہیں …مزید پڑھیں

حضرت شیخ احمد فرقانی شہید آف عراق

(مطبوعہ الفضل ڈائجسٹ 11 اکتوبر 2019ء) ماہنامہ ’’خالد‘‘ ربوہ مئی 2011ء میں مکرم عمار احمد پراچہ صاحب کے قلم سے حضرت شیخ احمد فرقانی صاحب کا ذکرخیر (تاریخ احمدیت سے منقول) شامل اشاعت ہے۔ ایک عرب مخلص نوجوان الحاج عبداللہ صاحب نے حضرت خلیفۃالمسیح الثانیؓ کی خدمت میں 16جنوری 1935ء کو بذریعہ خط اطلاع دی …مزید پڑھیں

مکرم نورالامین صاحب شہید لاہور

روزنامہ الفضل ربوہ 27فروری 2012ء میں مکرمہ ع۔ناصر صاحبہ نے اپنے ایک مضمون میں اپنے بھتیجے مکرم نورالامین صاحب کا ذکرخیر کیا ہے جو 28مئی 2010ء کو دہشتگردوں کے حملہ کے نتیجہ میں مسجد دارالذکر لاہور میں شہید ہوگئے۔ مکرم نورالامین صاحب 1974ء میں واہ کینٹ میں پیدا ہوئے۔ آپ کے دادا حضرت فیض احمد …مزید پڑھیں

زخموں سے چُور چُور تھا لب پہ گِلہ نہ تھا – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 16؍اپریل 2012ء میں مکرم عبدالکریم قدسیؔ صاحب کی محترم برادرم عبدالقدوس صاحب شہید کے بارہ میں درج ذیل مختصر نظم شامل اشاعت ہے: زخموں سے چُور چُور تھا لب پہ گِلہ نہ تھا کیا حوصلہ تھا ماسٹر عبدالقدوس کا مجرم نہ کہہ سکا وہ کسی بے گناہ کو بڑھتا ہی جا رہا …مزید پڑھیں

بَن پڑا جو بھی مخالف نے ستم رکھا ہے – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 30 مئی 2012ء میں مکرم عبدالقدوس شہید کے لئے کہی گئی مکرم بشارت محمود طاہر صاحب کی نظم سے انتخاب پیش ہے: بَن پڑا جو بھی مخالف نے ستم رکھا ہے تُو نے قدوسؔ محبت کا بھرم رکھا ہے خوب دکھلائی وفا تُو نے سرِ مقتل بھی کٹ گئے ہاتھ تو سینے …مزید پڑھیں

رہتی دنیا تک جو چمکے تُو نے ایسا کام کیا – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 3؍مئی 2012ء میں مکرم مبارک احمد عابد صاحب کی مکرم عبدالقدوس صاحب شہید کے بارہ میں نظم شائع ہوئی ہے۔ اس نظم میں سے انتخاب ملاحظہ فرمائیں: رہتی دنیا تک جو چمکے تُو نے ایسا کام کیا جان لُٹا دی روحِ وفا کو لیکن نہ نیلام کیا اپنے لہو سے ایسا اِک …مزید پڑھیں

پیشِ نظر ہے بیعتِ صداقت کا راستہ – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 5 جون2012ء میں مکرم عبدالقدوس شہید کے حوالہ سے کہا گیا مکرم عبدالکریم قدسیؔ صاحب کا کلام شائع ہوا ہے۔ اس نظم میں سے انتخاب پیش ہے: پیشِ نظر ہے بیعتِ صداقت کا راستہ ہم نے چنا ہوا ہے سعادت کا راستہ عبداللطیفؔ ہو کہ وہ عبدالقدوسؔ ہو اپنا رہے ہیں ہنس …مزید پڑھیں

گالیوں اور سختیوں پر شیوۂ صبر و رضا – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 18 جولائی2012ء میں مکرم عبدالقدوس شہید کے حوالہ سے کہا گیا مکرم ابن کریم صاحب کا کلام شائع ہوا ہے۔ اس نظم میں سے انتخاب پیش ہے: گالیوں اور سختیوں پر شیوۂ صبر و رضا ہاں یہی باندھا ہوا ہے ہم نے پیمانِ وفا ہاں یہی ہے شرطِ بیعت ہاں یہی عہدِ …مزید پڑھیں

مکرم صاحبزادہ داؤد احمد صاحب شہید

روزنامہ الفضل ربوہ یکم فروری 2012ء میں شائع ہونے والی خبر کے مطابق 23 جنوری 2012ء کی صبح سرائے نورنگ ضلع بنوں کے ایک احمدی مکرم صاحبزادہ داؤد احمد صاحب ابن مکرم محمد شفیع صاحب کو نامعلوم موٹرسائیکل سواروں نے فائرنگ کرکے سرِ بازار شہید کردیا۔ شہید مرحوم کی عمر 55 سال تھی اور آپ …مزید پڑھیں

محترم ڈاکٹر عبدالمنان صدیقی صاحب

روزنامہ الفضل ربوہ 4 جنوری 2012ء میں مکرم ڈاکٹر عبدالمنان صدیقی صاحب کے بارہ میں مکرم حافظ مظفر احمد صاحب کا ایک مضمون شامل اشاعت ہے۔ مضمون نگار بیان کرتے ہیں کہ 1995ء میں محترم ڈاکٹر صاحب امریکہ سے اعلیٰ تعلیم حاصل کرکے آئے تو ایک طرف اپنے والد کے قائم کردہ فضل عمر میڈیکل …مزید پڑھیں

تین افغان شہداء : محترم مولوی عبدالحلیم صاحب- محترم قاری نورعلی صاحب- محترم ولی داد خان صاحب

ماہنامہ ’’خالد‘‘ اپریل 2011ء میں مکرم عمار احمد پراچہ صاحب کے قلم سے تین افغان شہدائے احمدیت کا تذکرہ شامل اشاعت ہے۔ 5؍فروری 1925ء کو دو احمدیوں محترم مولوی عبدالحلیم صاحب آف چراسہ اور محترم قاری نور علی صاحب ساکن کابل کو امیر امان اللہ خان کی حکومت نے سنگسار کرکے شہید کردیا۔ جب یہ …مزید پڑھیں

کہتے ہو داستانِ وفا کو رقم کروں – شہدائے احمدیت کے حوالہ سے نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 7 جولائی 2012ء میں شہدائے احمدیت کے حوالہ سے مکرم فاروق محمود صاحب کی ایک خوبصورت نظم شامل اشاعت ہے۔ اس طویل نظم میں سے انتخاب ملاحظہ فرمائیں: کہتے ہو داستانِ وفا کو رقم کروں یعنی مَیں جوشِ اشک کو شعروں سے کم کروں شہداء کے واقعات، سپردِ قلم کروں قربانیوں کے …مزید پڑھیں

مکرم رانا دلاور حسین صاحب شہید

ماہنامہ ’’انصاراللہ‘‘ ربوہ دسمبر 2011ء میں مکرم رانا دلاور حسین صاحب شہید کے بارہ میں مکرم ملک مبشر منظور صاحب کا ایک مضمون شامل اشاعت ہے۔ قبل ازیں 26؍فروری 2016ء کے شمارہ میں ’’الفضل ڈائجسٹ‘‘ کے کالم میں آپ کا مختصر ذکرخیر کیا جاچکا ہے۔ مکرم رانا دلاور حسین صاحب گولیانوالہ ضلع شیخوپورہ میں مکرم …مزید پڑھیں

سُرخ چھینٹے در و دیوار پہ جو بکھرے ہیں – نظم

ہفت روزہ ’’بدر‘‘ قادیان 3؍مارچ 2011ء میں شہدائے لاہور کے حوالہ سے کہی جانے والی مکرم تنویر احمد ناصر صاحب کی ایک طویل نظم بعنوان ’’شہیدِ حق کا معاندِ حق سے خطاب‘‘ شامل اشاعت ہے۔ اس نظم میں سے انتخاب ہدیۂ قارئین ہے: سُرخ چھینٹے در و دیوار پہ جو بکھرے ہیں یہ مِرا خون …مزید پڑھیں

نہیں ! نہیں ! کہ مَیں صد چاک سو گلاب مرے! – نظم

ہفت روز ’’بدر‘‘ 4؍اگست 2011ء میں شامل اشاعت (شہیدانِ لاہور کی یاد میں کہی جانے والی) مکرم حبیب الرحمن ساحر صاحب کی ایک نظم میں سے انتخاب ہدیۂ قارئین ہے: نہیں ! نہیں ! کہ مَیں صد چاک سو گلاب مرے! ہیں زیب خُلدِ بریں پاک سو گلاب مرے لہُو سے اُن کے فروزاں نمودِ …مزید پڑھیں

شیخ عجم کے شاگرد – محترم مولوی نعمت اللہ خان صاحب شہید

ماہنامہ ’’خالد‘‘ مارچ 2011ء میں حضرت صاحبزادہ عبداللطیف صاحبؓ شہید کے شاگرد حضرت مولوی نعمت اللہ خان صاحب کا مختصر ذکر کیا گیا ہے جنہیں کابل میں جام شہادت پینا نصیب ہوا۔ حضرت مولوی نعمت اللہ خان صاحب موضع خوجہ ضلع پنج شیر افغانستان کے رہنے والے تھے۔ والد کا نام امان اللہ خان تھا۔ …مزید پڑھیں