حضرت ثوبیہ رضی اللہ عنہا

لجنہ اماء اللہ جرمنی کے رسالہ ’’خدیجہ‘‘ (سیرت صحابیات نمبر 2011ء) میں آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی رضاعی والدہ حضرت ثوبیہؓ پہلے آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کے چچا ابولہب کی لونڈی تھیں جنہیں ابولہب نے اپنے یتیم بھتیجے کی ولادت کی خوشی میں آزاد کردیا تھا۔ حضرت ثوبیہؓ نے ہی پہلے حضرت حمزہؓ …مزید پڑھیں

حضرت حلیمہ سعدیہ رضی اللہ عنہا

لجنہ اماء اللہ جرمنی کے رسالہ ’’خدیجہ‘‘ (سیرت صحابیات نمبر 2011ء) میں آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی رضاعی والدہ حضرت حلیمہ سعدیہؓ کے مختصر حالات مکرمہ سلطانہ صابرہ رفیق صاحبہ کے قلم سے شائع ہوئے ہیں ۔ حضرت حلیمہؓ سعدیہ کا تعلق قبیلہ بنی سعد اور ہوازنؔ قوم سے تھا۔ آپؓ کے والد ابی …مزید پڑھیں

حضرت سودہؓ بنت زمعہ

لجنہ اماء اللہ جرمنی کے رسالہ ’’خدیجہ‘‘ (سیرت صحابیات نمبر 2011ء) میں آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی زوجہ مطہرہ حضرت سودہؓ بنت زمعہ کے مختصر اوصاف مکرمہ مدیحہ جاوید صاحبہ کے قلم سے شامل اشاعت ہیں ۔ حضرت سودہؓ کا تعلق قریش کے قبیلہ عامر بن لوی سے تھا۔ آپؓ کی والدہ کا نام …مزید پڑھیں

حضرت حفصہ رضی اللہ عنہا

لجنہ اماء اللہ جرمنی کے رسالہ ’’خدیجہ‘‘ (سیرت صحابیات نمبر 2011ء) میں آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی زوجہ مطہرہ حضرت حفصہؓ کا مختصرذکرخیر مکرمہ امۃالودود صاحبہ نے تحریر کیا ہے۔ حضرت عمر فاروق ؓ اور حضرت زینبؓ بنت مظعون کی بیٹی اُمّ المومنین حضرت حفصہؓ کی پیدائش بعثتِ نبوی سے پانچ سال قبل ہوئی۔ …مزید پڑھیں

حضرت زینبؓ بنت خزیمہ

لجنہ اماء اللہ جرمنی کے رسالہ ’’خدیجہ‘‘ (سیرت صحابیات نمبر 2011ء) میں امّ المومنین حضرت زینبؓ بنت خزیمہ کا مختصر ذکرخیر مکرمہ عذرا عباسی صاحبہ کے قلم سے شامل اشاعت ہے۔ حضرت زینبؓ کا تعلق نجد کے قبیلہ عامر بن حصعصہ سے تھا۔ آپؓ قبیلہ کے سردار کی بیٹی تھیں ۔ آپؓ صاحبِ حیثیت ہونے …مزید پڑھیں

حضرت زینب بنت جحش رضی اللہ عنہا

لجنہ اماء اللہ جرمنی کے رسالہ ’’خدیجہ‘‘ (سیرت صحابیات نمبر 2011ء) میں امّ المومنین حضرت زینبؓ بنت جحش کا مختصر ذکرخیر مکرمہ مبشرہ ملک اعوان صاحبہ کے قلم سے شائع ہوا ہے۔ حضرت زینبؓ بنت جحش کی والدہ کا نام امیمہ تھا جو آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی حقیقی پھوپھی تھیں ۔ حضرت زینبؓ …مزید پڑھیں

حضرت جویریہ رضی اللہ عنہا

لجنہ اماء اللہ جرمنی کے رسالہ ’’خدیجہ‘‘ (سیرت صحابیات نمبر 2011ء) میں اُمّ المومنین حضرت جویریہؓ کا مختصر ذکرخیر مکرمہ سیّدہ شمیم شیخ صاحبہ کے قلم سے شامل اشاعت ہے۔ مدینہ سے 96 میل کے فاصلہ پر ایک مشہور چشمے ’مریسیع‘ کے پاس ایک قبیلہ بنو مصطلق آباد تھا جس کے سردار حارث بن ابی …مزید پڑھیں

حضرت سیّدہ اُمّ حبیبہ رضی اللہ عنہا

لجنہ اماء اللہ جرمنی کے رسالہ ’’خدیجہ‘‘ (سیرت صحابیات نمبر 2011ء) میں آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی زوجہ مطہرہ حضرت اُمّ حبیبہؓ کی مختصر سیرۃ و سوانح مکرمہ سلمیٰ منیر باجوہ صاحبہ کے قلم سے شامل اشاعت ہے۔ حضرت اُمّ حبیبہؓ کی کنیت رکھنے والی آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی زوجہ مطہرہ کا …مزید پڑھیں

حضرت میمونہ رضی اللہ عنہا

لجنہ اماء اللہ جرمنی کے رسالہ ’’خدیجہ‘‘ (سیرت صحابیات نمبر 2011ء) میں آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی زوجہ مطہرہ حضرت میمونہؓ کے اوصاف کا مختصر ذکر مکرمہ آصفہ احمد صاحبہ کے قلم سے شامل اشاعت ہے۔ حضرت میمونہؓ کااصل نام برّہ تھا۔آپؓ حارث بن حزن اور ہند کی بیٹی تھیں ۔ قبیلہ قریش کے …مزید پڑھیں

آنحضرت صلی اللہ علیہ وسلم کی صاحبزادی حضرت فاطمۃالزّھرا رضی اللہ عنہا

لجنہ اماء اللہ جرمنی کے رسالہ ’’خدیجہ‘‘ (سیرت صحابیات نمبر 2011ء) میں آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی صاحبزادی حضرت سیّدہ فاطمۃالزھرا رضی اللہ عنہا کی سیرت و سوانح کا بیان مکرمہ عذرا عباسی صاحبہ کے قلم سے شامل اشاعت ہے۔ آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی عمر مبارک پینتیس برس تھی جب حضرت خدیجہؓ …مزید پڑھیں

آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی صاحبزادی حضرت زینب رضی اللہ عنہا

آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی صاحبزادی حضرت زینب رضی اللہ عنہا کی مختصر سیرت و سوانح پیش ہے جو کہ لجنہ اماء اللہ جرمنی کے رسالہ ’’خدیجہ‘‘ (سیرت صحابیات نمبر 2011ء) میں مکرمہ مبارکہ شاہین صاحبہ کے قلم سے شامل اشاعت ہے۔ آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی عمر مبارک تیس برس تھی جب …مزید پڑھیں

آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی صاحبزادی حضرت رقیّہ رضی اللہ عنہا

آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی صاحبزادی حضرت رقیّہ رضی اللہ عنہا کی مختصر سیرت و سوانح پیش ہے جو کہ لجنہ اماء اللہ جرمنی کے رسالہ ’’خدیجہ‘‘ (سیرت صحابیات نمبر 2011ء) میں مکرمہ مبارکہ شاہین صاحبہ کے قلم سے شامل اشاعت ہے۔ آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی عمر 33 سال تھی جب حضرت …مزید پڑھیں

آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی صاحبزادی حضرت اُمّ کلثوم رضی اللہ عنہا

آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی صاحبزادی حضرت اُمّ کلثوم رضی اللہ عنہا کی مختصر سیرت و سوانح پیش ہے جو کہ لجنہ اماء اللہ جرمنی کے رسالہ ’’خدیجہ‘‘ (سیرت صحابیات نمبر 2011ء) میں مکرمہ مبارکہ شاہین صاحبہ کے قلم سے شامل اشاعت ہے۔ آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی عمر 34 سال تھی جب …مزید پڑھیں

شہادت حضرت امام حسین ؓ

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 3؍دسمبر 2016ء میں حضرت امام حسینؓ کی دردناک شہادت سے متعلق مکرم محمداعظم اکسیر صاحب کا ایک مضمون شامل اشاعت ہے۔ بغداد سے قریباً سو کلومیٹر دُور، دریائے فرات کے کنارے، کربلا ایک چٹیل و بے آباد ویرانہ کے سوا کچھ بھی نہ تھی۔ مگر آج لاکھوں کی آبادی پر مشتمل یہاں …مزید پڑھیں

حضرت فاطمۃالزھرا رضی اللہ عنہا

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 20ستمبر2010ء میں مکرمہ ش۔انجم صاحبہ کے قلم سے حضرت فاطمۃالزھراؓ کی سیرۃ و سوانح پر مشتمل ایک مضمون شائع ہوا ہے۔ آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم اور حضرت خدیجۃالکبریٰ کی سب سے چھوٹی صاحبزادی حضرت فاطمۃ الزہر ا ؓ کی کنیت امّ الحسنین تھی کیونکہ آپؓ حضرت امام حسن ؓ اور حضرت …مزید پڑھیں

حضرت زبیر ؓ بن العوام

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 25؍جولائی 2009ء میں صحابیٔ رسولؐ حضرت زبیر ؓ بن العوام (کنیت ابوعبداللہ) کی سیرت پر ایک مضمون مکرم حافظ مظفر احمد صاحب کے قلم سے شامل اشاعت ہے۔ حضرت زبیرؓ کے والد کا نام عوام اور والدہ کا نام صفیہ تھا جو آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی پھوپھی تھیں۔ آپؓ حضرت …مزید پڑھیں

اللہ اللہ وہ حسینؓ ابن علیؓ جس کے لئے – نظم

روزنامہ ’’الفضل ‘‘ربوہ 6 ؍جنوری 2009ء میں شامل اشاعت مکرم ڈاکٹر محمود الحسن صاحب کے کلام سے انتخاب ملاحظہ فرمائیں: اللہ اللہ وہ حسینؓ ابن علیؓ جس کے لئے کربلا کی حشر سامانی تھی جنت کی امیں وہ سراپا عشق تھا ، معراج تھی اُس کی نماز روح اس کی عرش پر تھی خاک پر …مزید پڑھیں

امّ المومنین حضرت صفیہ رضی اللہ عنہا

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 11 فروری 2009ء میں مکرمہ ص۔احمد صاحبہ کے قلم سے امّ المومنین حضرت صفیہ رضی اللہ عنہا کی مقدس سیرت پر ایک مضمون شامل اشاعت ہے۔ حضرت صفیہ رضی اللہ تعالیٰ عنہا مدینہ کے یہودی قبیلہ بنونضیر کے سردار حیی بن اخطب کی بیٹی تھیں جس کا شجرۂ نسب حضرت ہارون علیہ …مزید پڑھیں

حضرت عائشہ صدیقہ رضی اللہ تعالیٰ عنہا

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 14نومبر2008ء میں مکرم محمد اشرف کاہلوں صاحب صاحب کا ایک مضمون بابت سیرۃ حضرت عائشہ صدیقہؓ شامل اشاعت ہے۔ قبل ازیں آپؓ کی سیرۃ پر ایک مضمون 3مئی 2002ء کے شمارہ کے اسی کالم کی زینت بن چکا ہے۔ نام عائشہ، لقب صدیقہ، کنیت ام عبداللہ، والدہ زینب کنیت ام رومان۔ بعثت …مزید پڑھیں

حسین ابن علیؓ تیری عظمتوں کو سلام – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 27؍جنوری 2007ء میں شامل اشاعت مکرم چودھری شبیر احمد صاحب کی ایک نظم ’’ایک عظیم قربانی‘‘ سے انتخاب ذیل میں پیش ہے: حسین ابن علیؓ تیری عظمتوں کو سلام یزیدیت کے مقابل پہ جرأتوں کو سلام شبیہ سرورؐ کونین پیکر اوصاف ترے جمال ترے صبر ، قناعتوں کو سلام زمیں پہ سجدہ …مزید پڑھیں

ازواج مطہرات کی تعلیم و تربیت

اﷲ تعالیٰ فرماتا ہے: اے اہل بیت! یقینا اﷲ چاہتا ہے کہ تم سے ہر قسم کی آلائش دور کردے اور تمہیں اچھی طرح پاک کردے۔ (احزاب:34) اس وعدہ کے مطابق اﷲ تعالیٰ نے آنحضرت ﷺ کی ازواج مطہرات کو جو پاکیزگی اور رفعت بخشی اس میں رسول اﷲ ﷺ کی بے انتہا محنت اور …مزید پڑھیں

عیسائی راہب بحیرا کی گواہی

(مطبوعہ الفضل ڈائجسٹ 8 مارچ 2019ء) آنحضورﷺ کے بچپن میں عیسائی راہب بحیرا کی آپؐ کے حوالہ سے ایک ایمان افروز گواہی مکرمہ امۃالباری ناصر صاحبہ کی مرتّبہ ایک کتاب سے ماہنامہ ’’تشحیذالاذہان‘‘ جنوری فروری 2012ء کی زینت بنائی گئی ہے۔ آنحضرت ﷺ کی عمر مبارک قریباً بارہ سال تھی۔ آپؐ کے والدین اور دادا …مزید پڑھیں

آنحضورﷺ کے محترم والدین

حضرت مسیح موعود علیہ السلام فرماتے ہیں: ’’خدا تعالیٰ قادر ہے، حکیم بھی ہے اور اس کی حکمت اور مصلحت چاہتی ہے کہ اپنے نبیوں اور ماموروں کو ایسی اعلیٰ قوم اور خاندان اور ذاتی نیک چال چلن کے ساتھ بھیجے تاکہ کوئی دل ان کی اطاعت سے کراہت نہ کرے۔ یہی وجہ ہے جو …مزید پڑھیں

حضرت ابراہیم رضی اللہ تعالیٰ عنہ

آنحضرتﷺ نے جن بادشاہوں کو تبلیغی خطوط ارسال فرمائے اُن میں مقوقس والیٔ مصر بھی تھا جس کی طرف حضرت حاطبؓ بن ابی بلتعہ خط لے کر گئے۔ رسول اللہﷺ کے خط اور حضرت حاطبؓ کی گفتگو سے مقوقس بہت متاثر ہوا اور وہ متبرک خط اُس نے ہاتھی دانت کی ایک ڈبیہ میں محفوظ …مزید پڑھیں

آنحضرتﷺ کی صاحبزادیاں

حضرت خدیجہ سے آنحضرتﷺ کے تین لڑکے قاسمؓ، طاہرؓ، طیبؓ (بعض روایات میں چوتھے لڑکے عبداللہ بھی) اور چار لڑکیاں زینبؓ، رقیہؓ، امّ کلثومؓ اور فاطمہؓ پیدا ہوئے۔ یعنی ساری اولاد سوائے حضرت ابراہیمؑ کے جو حضرت ماریہ قطبیہؓ کے بطن سے پیدا ہوئے، حضرت خدیجہؓ کے بطن سے پیدا ہوئی۔ آنحضورﷺ کے تمام بیٹے …مزید پڑھیں