نونہالانِ جماعت مجھے کچھ کہنا ہے (نمبر8)

(مطبوعہ رسالہ اسماعیل اپریل تا جون 2014ء) نونہالانِ جماعت مجھے کچھ کہنا ہے (نمبر8) (کاوش: فرخ سلطان محمود) سیدنا حضور انور ایدہ اللہ تعالیٰ بنصرہ العزیز نے واقفین نو بچوں کی تعلیم و تربیت کے لئے مختلف پہلوؤں سے اُن کی راہنمائی کا سلسلہ جاری فرمایا ہوا ہے۔ اس میں اجتماعات اور اجلاسات سے خطابات، …مزید پڑھیں

نونہالانِ جماعت مجھے کچھ کہنا ہے (نمبر6)

(مطبوعہ رسالہ اسماعیل جولائی تا ستمبر 2013ء) نونہالانِ جماعت مجھے کچھ کہنا ہے (نمبر6) (کاوش: فرخ سلطان محمود) سیدنا حضور انور ایدہ اللہ تعالیٰ بنصرہ العزیز نے واقفین نو بچوں کی تعلیم و تربیت کے لئے مختلف پہلوؤں سے اُن کی راہنمائی کا سلسلہ جاری فرمایا ہوا ہے۔ اس میں اجتماعات اور اجلاسات سے خطابات، …مزید پڑھیں

’’جامعہ احمدیہ‘‘ کی بنیاد اور شاندار ترقیات – جامعہ احمدیہ جرمنی

(مطبوعہ رسالہ اسماعیل اکتوبر تا دسمبر 2013ء) تاریخ احمدیت کا ایک زرّیں باب دینی تعلیم کے ادارے ’’جامعہ احمدیہ‘‘ کی بنیاد اور شاندار ترقیات جرمنی میں جامعہ ا حمدیہ کا بابرکت افتتاح (شیخ فضل عمر۔ یوکے) حضورانور ایدہ اللہ تعالیٰ بنصرہ العزیز 2003 ء میں اپنے دورِ خلافت کے پہلے دورہ پر جب جرمنی تشریف …مزید پڑھیں

دینی تعلیم کے ادارے ’’جامعہ احمدیہ‘‘ کی بنیاد اور شاندار ترقیات – حصہ اول

(مطبوعہ رسالہ اسماعیل اپریل تا جون 2014ء) تاریخ احمدیت کا ایک زرّیں باب دینی تعلیم کے ادارے ’’جامعہ احمدیہ‘‘ کی بنیاد اور شاندار ترقیات وہ مادرِعلمی جس کی ابتدا مدرسہ تعلیم الاسلام سے ہوئی اورترقی کرتے کرتے جامعہ احمدیہ کے نامِ نامی تک پہنچ گیا شروع شروع میں قادیان میں دو سکول ہوا کرتے تھے …مزید پڑھیں

دینی تعلیم کے ادارے ’’جامعہ احمدیہ‘‘ کی بنیاد اور شاندار ترقیات – حصہ دوم

(مطبوعہ رسالہ اسماعیل اپریل تا جون 2013ء) تاریخ احمدیت کا ایک زرّیں باب دینی تعلیم کے ادارے ’’جامعہ احمدیہ‘‘ کی بنیاد اور شاندار ترقیات (شیخ فضل عمر) یورپ میں پہلے جامعہ احمدیہ کا آغازاور طلبہ کو حضرت خلیفۃالمسیح الخامس ایدہ اللہ کی نصائح برطانیہ کا جامعہ احمدیہ بھی اُسی مقدس درخت کا ایک اور شیریں …مزید پڑھیں

’’جامعہ احمدیہ‘‘ کی بنیاد اور شاندار ترقیات – تیسرا حصہ

(مطبوعہ سہ ماہی اسماعیل اکتوبر تا دسمبر 2012ء) تاریخ احمدیت کا ایک زرّیں باب: دینی تعلیم کے ادارے ’’جامعہ احمدیہ‘‘ کی بنیاد اور شاندار ترقیات (فرخ سلطان محمود) مدرسہ احمدیہ قادیان سے جامعہ احمدیہ ربوہ تک کے سفر کی ایمان افروز داستان آج سے 115 سال پہلے حضرت اقدس مسیح موعود علیہ السلام نے یہ …مزید پڑھیں

دیوبند سے قادیان تک

مِنَ الظُّلُمٰتِ اِلَی النُّوۡرِ ہفت روزہ ’’بدر‘‘ قادیان 4؍اگست 2011ء میں مکرم مولوی واحد احمد صدیقی صاحب (استاد جامعہ احمدیہ قادیان) دیوبند سے قادیان تک کی اپنی ہجرت پر روشنی ڈالتے ہیں۔ آپ رقمطراز ہیں کہ خاکسار 14؍جون 1967ء کو صوبہ بہار کے گاؤں الپورہ میں پیدا ہوا۔ گاؤں کے مدرسہ میں ابتدائی تعلیم حاصل …مزید پڑھیں

محترم مولانا ظفر محمد ظفر صاحب کا کلام

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 3؍ نومبر 2011ء میں شائع ہونے والے ایک مضمون میں مکرم پروفیسرڈاکٹر پرویز پروازی صاحب کے قلم سے محترم مولانا ظفر محمد ظفر صاحب کے علم کلام کو خراج تحسین پیش کیا گیا ہے۔ 1952-53ء میں ربوہ میں مکرم مولوی ظفر محمد صاحب پر و فیسر جامعہ احمدیہ کی نظموں کا بہت …مزید پڑھیں

کرن کرن میں جہاں اک پیام پنہاں ہے – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 24مئی 2011ء میں جامعہ احمدیہ کے حوالہ سے کہی جانے والی ایک طویل نظم بعنوان ’’یہ صبحِ نو کی علامت یہ روشنی کا عَلم‘‘ شائع ہوئی ہے۔ محترم رشید قیصرانی صاحب کی اس نظم میں سے انتخاب ہدیۂ قارئین ہے: یہ صبحِ نو کی علامت یہ روشنی کا عَلم کرن کرن میں …مزید پڑھیں

مکرم چوہدری محمود احمد صاحب چیمہ

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 20 اگست 2009ء میں مکرم محمد صدیق شاہد صاحب گورداسپوری نے اپنے مضمون میں محترم چودھری محمود احمد چیمہ صاحب مبلغ سلسلہ کا ذکرخیر کیا ہے۔ مکرم چوہدری محمود احمد صاحب چیمہ مربی سلسلہ کو خداتعالیٰ نے نصف صدی سے زائد عرصہ تک بیرون پاکستان خدمات سلسلہ کی توفیق عطا فرمائی۔ 14 …مزید پڑھیں

جامعہ احمدیہ سری لنکا

ہفت روزہ بدر قادیان 5 مارچ 2009ء میں جامعہ احمدیہ سری لنکا کے بارہ میں ایک تعارفی مضمون مکرم اے جی مشتاق احمد صاحب پرنسپل جامعہ احمدیہ کے قلم سے شامل اشاعت ہے۔ سری لنکا میں جامعہ احمدیہ Pasyala کینڈی روڈ نمبر 70 میں واقع ہے جہاں دو ایکڑ زمین کا ایک حصہ حضرت خلیفۃ …مزید پڑھیں

حضرت میر محمداسحق صاحبؓ

حضرت میر محمداسحق صاحبؓ کی سیرۃ پر ایک مضمون محترم مولانا محمد حفیظ صاحب بقاپوری نے تحریر کیا تھا جسے روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 8؍مارچ 2010ء میں مکرّر شائع کیا گیا ہے۔ 17؍مارچ 1944ء کی شام حضرت میر محمد اسحاق صاحبؓ کی وفات ہوئی۔ آپؓ قادیان کی ایک محبوب ہستی تھے۔ غریبوں کے غمگسار۔ محتاجوں، یتیموں، …مزید پڑھیں

حضرت ملک سیف الرحمٰن صاحب

ماہنامہ ’’النور‘‘ امریکہ جون 2009ء میں حضرت ملک سیف الرحمٰن صاحب کا ذکرخیر مکرم عبدالغفار ڈار صاحب کے قلم سے شامل اشاعت ہے۔ ملک صاحب مرحوم حضرت مصلح موعودؓ کے دَور ِ خلافت میں آئے اور بہت جلد اپنے علم وفضل اور اخلاص کی وجہ سے حضور کی خصوصی توجہ کا مورد بن گئے۔ یہ …مزید پڑھیں

جامعہ احمدیہ سے جڑی یادیں

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 20؍اکتوبر 2008ء میں محترم مولانا محمد کریم الدین صاحب شاہد سابق ہیڈماسٹرمدرسہ احمدیہ قادیان نے اپنے مضمون میں جامعہ احمدیہ کے حوالہ سے اپنی یادوں کو قلم بند کیا ہے۔ خاکسار کا آبائی وطن محبوب نگر آندھرا پردیش ہے۔ والد مکرم برہان الدین صاحب مرحوم جب پولیس کی سروس سے ریٹائر ہوئے …مزید پڑھیں

حضرت قاضی محمد نذیر صاحب لائلپوری

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 16 ستمبر 2008ء میں حضرت قاضی محمد نذیر صاحب لائلپوری کا مختصر ذکرخیر شامل اشاعت ہے۔ حضرت قاضی محمد نذیر صاحب لائلپوری جماعت احمدیہ کے شگفتہ بیان مقرر، نامور محقق اور مصنف تھے۔ آپ نے جماعت احمدیہ کے لٹریچر میں متعدد قیمتی کتب کا اضافہ کیا۔ آپ 3ستمبر 1898ء کو پیدا ہوئے۔ …مزید پڑھیں

جامعہ احمدیہ قادیان۔ چند یادیں

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 8؍مارچ 2008ء میں محترم مولانا منیر احمد خادم صاحب سابق پرنسپل جامعہ احمدیہ قادیان کے قلم سے جامعہ احمدیہ قادیان سے متعلق چند یادیں شائع ہوئی ہیں۔ اگرچہ جامعہ احمدیہ میں داخلہ سے قبل اس کی اہمیت کا اتنا احساس نہیں تھا مگر بعض بزرگوں کی تحریک اور والد محترم مولانا بشیر …مزید پڑھیں

جامعہ احمدیہ جونیئر سیکشن ربوہ کا صد سالہ خلافت احمدیہ جوبلی سووینئر

A4 سائز کے 80سے زائد رنگین صفحات پر مشتمل جامعہ احمدیہ ربوہ کے جونیئر سیکشن کی طرف سے خلافت احمدیہ صد سالہ جوبلی کے موقع پر شائع کیا جانے والا نہایت دیدہ زیب سووینئر موصول ہوا ہے۔ اس قیمتی سووینئر میں نہ صرف بہت سے علمی، تربیتی اور تحقیقی مضامین شامل اشاعت ہیں بلکہ ادارہ …مزید پڑھیں

خلفاء سلسلہ کی طلبہ جامعہ کو نصائح

جامعہ احمدیہ جونیئر سیکشن کے خلافت سووینئر 2008ء میں مکرم امین الرحمن صاحب نے خلفاء سلسلہ عالیہ احمدیہ کی طلبہ جامعہ کے لئے اہم نصائح کے حوالہ سے ایک مضمون مرتب کیا ہے۔ ٭ حضرت خلیفۃالمسیح الاوّلؓ نے فرمایا: ’’جب تک جڑ زمین میں مضبوطی کے ساتھ گڑ نہ جائے اس وقت تک اکھیڑنا آسان …مزید پڑھیں

وقف زندگی

جامعہ احمدیہ ربوہ (جونیئر سیکشن) کے صدسالہ خلافت سووینئر میں ایک مضمون محترم چودھری حمیداللہ صاحب (وکیل اعلیٰ) کے قلم سے شامل اشاعت ہے جس میں واقفین زندگی کے لئے نہایت قیمتی اور قابل تقلید روایات قلمبند کی گئی ہیں۔ جماعت احمدیہ میں زندگی وقف کرنے کی روایت کا مطلب ہے کہ اللہ تعالیٰ کی …مزید پڑھیں

جامعہ احمدیہ

جامعہ احمدیہ ربوہ کے خلافت سووینئر میں شعبہ تاریخ و سیرت کے ایک مضمون میں جامعہ احمدیہ کی تاریخ کا تفصیل سے احاطہ کیا گیا ہے۔ حضرت مسیح موعود علیہ السلام نے اپنے عظیم الشان فرض کی تکمیل کے لئے قادیان میں ایک مدرسہ کے قیام کی غرض سے 15؍ستمبر 1897ء کو بذریعہ اشتہار اعلان …مزید پڑھیں

جامعہ احمدیہ ربوہ کا صد سالہ خلافت سووینئر

جامعہ احمدیہ ربوہ (سینئر) کا اردو زبان میں شائع ہونے والا صد سالہ خلافت سووینئر A4 سائز کے دو صد سے زائد صفحات پر مشتمل ہے جس میں متعدد علمی اور تحقیقی مضامین اور جامعہ احمدیہ کی تاریخ کے حوالہ سے اہم اور تفصیلی معلومات پیش کی گئی ہیں۔ تحقیقی مضامین نہایت عمدہ ہیں جنہیں …مزید پڑھیں

جامعہ ہے درس گاہوں کا امام – نظم

ہفت روزہ ’’بدر‘‘ 25؍جون 2007ء میں ’’جامعہ احمدیہ‘‘ کے عنوان سے مکرم محمد مقصود منیب صاحب کی ایک نظم شامل اشاعت ہے۔ اس طویل نظم سے انتخاب ملاحظہ فرمائیں: جامعہ ہے درس گاہوں کا امام اس کا بانی ہے محمدؐ کا غلام بابِ اُلفت، شہرِ جودت جامعہ فیض کی جوئے سعادت جامعہ آپ ہے اپنی …مزید پڑھیں

یہ واقفین زندگی بڑے ہی سخت جان ہیں – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 6؍جون 2006ء میں ’’واقفین زندگی‘‘ کے عنوان سے مکرم عبدالحمید خان شوق صاحب کی نظم شائع ہوئی ہے جس میں سے چند اشعار پیش ہیں: یہ واقفین زندگی بڑے ہی سخت جان ہیں ہزار مشکلات میں بھی حوصلے کی کان ہیں عبادتوں ریاضتوں میں رات دن لگے ہوئے یہ دیندار ، متقی …مزید پڑھیں

جامعہ احمدیہ – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 11؍فروری 2006ء میں ’’جامعہ احمدیہ‘‘ کے حوالہ سے مکرم راجہ منیر احمد خان صاحب کی ایک نظم شامل اشاعت ہے۔ اس طویل نظم سے انتخاب ملاحظہ کیجئے: مہدی دوراں نے ڈالی تھی بنا بعد از دعا ایک ادارے کی کہ جس میں ہو فقط خوفِ خدا اس کا ہر اک کام بابرکت …مزید پڑھیں

مکرم فواد محمد کانو صاحب

مکرم فواد محمد کانو صاحب مربی سلسلہ سیرالیون یکم جنوری 2006ء کو دریا میں نہاتے ہوئے ڈوب کر شہید ہوگئے۔ آپ یکم جنوری 1956ء کو روکوپور (سیرالیون) کے قریب ایک گاؤں Matantuمیں پیدا ہوئے۔ روکوپور کے احمدیہ سکولوں میں تعلیم حاصل کی۔ 1974ء میں قبول احمدیت کی سعادت پائی اور 1975ء میں اپنی زندگی وقف …مزید پڑھیں