مجھے تلاشِ یار ہے ، مجھے تلاشِ طور ہے – نظم

ماہنامہ ’’النور‘‘ امریکہ اپریل 2005ء میں ’’نماز‘‘ کے عنوان سے شامل اشاعت مکرم خالد ہدایت بھٹی صاحب کی ایک طویل نظم سے انتخاب ہدیۂ قارئین ہے:- مجھے تلاشِ یار ہے ، مجھے تلاشِ طور ہے تری نظر بہشت پر میری نظر میں نور ہے مکانِ دل بھی دیکھ تو یہاں کوئی ضرور ہے ادھر اُدھر …مزید پڑھیں

رہِ جاناں میں شبِ غم کی سیاہی بھی تو ہے

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 28؍اکتوبر 2005ء کی زینت مکرم عبدالمنان ناہید صاحب کی ایک غزل سے انتخاب ہدیۂ قارئین ہے: رہِ جاناں میں شبِ غم کی سیاہی بھی تو ہے اور بے چارہ دل اس راہ کا راہی بھی تو ہے آدمی کہتے ہیں آزاد بھی مختار بھی ہے لیکن آدابِ وفا امر و مناہی بھی …مزید پڑھیں

کوئی کتنا بھی خفی کردے اشارا اپنا – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 27؍اکتوبر 2005ء میں شامل اشاعت مکرم ناصر احمد سید صاحب کی ایک غزل سے انتخاب ملاحظہ کیجئے: کوئی کتنا بھی خفی کردے اشارا اپنا ڈھونڈ لیتی ہے مگر خاک ستارہ اپنا مجھ پہ اُتری ہے ترے کشف محبت کی کتاب جس کا ہر لفظ ہی لکھا ہے تمہارا اپنا سب کے سب …مزید پڑھیں

تقدیر زمانہ کا ’’مسرور‘‘ امیں شاید – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 6؍اکتوبر 2005ء میں شامل اشاعت مکرم عبدالسلام اسلام صاحب کی ایک نظم سے انتخاب ہدیۂ قارئین ہے: تقدیر زمانہ کا ’’مسرور‘‘ امیں شاید یہ خاتم گیتی کا تابندہ نگیں شاید آفاق کے گنبد میں مہدی کی صدا گونجی جاگ اٹھیں گے اب سارے یہ اہل زمیں شاید قوموں کی پنہ گہ ہے …مزید پڑھیں

یہ دن ہیں فیضانِ ایزدی کے – رمضان المبارک کے بارہ میں نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 26؍اکتوبر 2005ء میں شائع ہونے والی مکرم عبدالسلام اختر صاحب کی رمضان المبارک کے آخری ایام کے حوالہ سے کہی گئی ایک نظم بعنوان ’’دیار رحمت میں رہنے والو! یہ دن ہیں فیضانِ ایزدی کے‘‘ سے انتخاب پیش ہے: کبھی وہ پندارِ بے نیازی ، کبھی یہ اعجاز دلربائی کبھی حجاب اور …مزید پڑھیں

زندگی مورد الزام ہوئی جاتی ہے – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 22؍اکتوبر 2005ء میں شامل اشاعت مکرمہ ڈاکٹر فہمیدہ منیر صاحبہ کی ایک نظم بعنوان ’’سانحہ مونگ سے متأثر ہوکر‘‘ میں سے انتخاب پیش ہے: زندگی مورد الزام ہوئی جاتی ہے اُف کہ دنیا تری بدنام ہوئی جاتی ہے وصل کا جام چھلک جانے کو ہے ہوش نہیں جان جاں جان ترے نام …مزید پڑھیں

یا الٰہی! رحمتیں تیری ہیں ناپیدا کنار – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 7؍اکتوبر 2005ء میں شامل اشاعت مکرم راجہ منیر احمد خان صاحب کی ایک نظم بعنوان ’’احسان عظیم‘‘ میں سے انتخاب پیش ہے: یا الٰہی! رحمتیں تیری ہیں ناپیدا کنار یہ نہیں ممکن کہ تا روزِ قیامت ہوں شمار اے مرے رحماں! ترا قرآں ہے احسانِ عظیم جو کہ دکھلاتا ہے عاشق کو …مزید پڑھیں

اَلم گزیدہ ہیں دامانِ دل دریدہ ہیں – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 7؍اکتوبر 2005ء میں شامل اشاعت محترم ثاقب زیروی صاحب کی نظم ’’فریاد‘‘ میں سے انتخاب پیش ہے: اَلم گزیدہ ہیں دامانِ دل دریدہ ہیں تِرے حضور میں آئے ہیں غم رسیدہ ہیں مَیں اپنی دیکھتی آنکھوں کو کیسے دھوکہ دوں چمن کے پھول تو افسردہ خوں چکیدہ ہیں جو ربط خاص ہے …مزید پڑھیں

فضلوں کی ہے برسات کبھی آ کے تو دیکھو – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 30؍ستمبر 2005ء کی زینت مکرم ملک مبشر احمد ریحان صاحب کی ایک نظم ’’کرامات‘‘ سے انتخاب ہدیۂ قارئین ہے: فضلوں کی ہے برسات کبھی آ کے تو دیکھو روشن ہیں یہ دن رات کبھی آ کے تو دیکھو فرصت ہے کہاں تم کو کہیں مادہ پرستو کیسی ہیں کرامات کبھی آکے تو …مزید پڑھیں

وادیٔ بطحا سے نکلا اِک کریم ابن کریم – نعت

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 8؍اکتوبر 2005ء میں شائع ہونے والی مکرم چودھری شبیر احمد صاحب کی ایک نعت سے انتخاب ہدیۂ قارئین ہے: وادیٔ بطحا سے نکلا اِک کریم ابن کریم شاہکارِ دستِ قدرت نعمتِ ربِّ رحیم ہیں زمین و آسماں شاہد کہ ہے اس کا وجود ہر دو عالم پر خدا کا ایک احسانِ عظیم …مزید پڑھیں