آنحضورﷺ کی خوراک

(مطبوعہ الفضل ڈائجسٹ 16 نومبر 2018ء) روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 30؍اکتوبر 2012ء میں اختصار سے آنحضور ﷺ کی خوراک کے بارہ میں بیان کیا گیا ہے۔ (منقول از شمائل الترمذی) رسول اللہ ﷺ کی غذا انتہائی سادہ ہوتی تھی۔ آپؐ جَو کی روٹی کھالیتے اور کبھی نہ ملتی تو رات خالی پیٹ بھی گزار دیتے۔ آپؐ …مزید پڑھیں

شمائل نبوی ﷺ کی ایک جھلک

(مطبوعہ الفضل ڈائجسٹ 16 نومبر 2018ء) روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ11؍اکتوبر 2012ء میں ایک مضمون ’’شمائلِ نبویﷺ کی ایک جھلک‘‘ مکرم حافظ مظفر احمد صاحب کے قلم سے شامل اشاعت ہے۔ ٭ نبی کریمؐ چال ڈھال میں نہایت کوہ وقار انسان تھے۔ چال ایسی سبک تھی جیسے ڈھلوان سے اُتر رہے ہوں۔ حضرت ابوہریرہ ؓ کہتے ہیں …مزید پڑھیں

حضرت نواب محمد عبدﷲ خان صاحبؓ

(مطبوعہ الفضل ڈائجسٹ 9 نومبر 2018ء) روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 24؍اکتوبر 2012ء میں مکرم خواجہ عبد الغفار ڈار صاحب کے قلم سے حضرت نواب محمد عبداللہ خان صاحبؓ کا ذکرخیر شامل اشاعت ہے۔ مضمون نگار رقمطراز ہیں کہ حضرت نواب محمد عبد اللہ خان صاحبؓ خاکسار کے محسن تھے۔ زمانہ طالب علمی کے ایام میں قادیان …مزید پڑھیں

محترم میاں محمد صدیق بانی صاحب

(مطبوعہ الفضل ڈائجسٹ 2 نومبر 2018ء) روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ21و 22ستمبر 2012ء میں شائع ہونے والے ایک مضمون میں مکرم شریف احمد بانی صاحب نے محترم میاں محمد صدیق بانی صاحب کی دینی خدمات پر روشنی ڈالی ہے۔ قبل ازیں مرحوم بانی صاحب کا ذکرخیر متعدّد شماروں (بشمول 7؍فروری 2014ء، 3؍ستمبر 2010ء اور 4؍اپریل 2003ء) کے …مزید پڑھیں

تبت۔ دنیا کی چھت

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 8؍اکتوبر 2012ء میں تبّت کا تعارف پیش کیا گیا ہے۔ مغربی تبّت کا علاقہ KA-ERH دنیا کا بلند ترین قصبہ خیال کیا جاتا ہے جس کی سطحٔ سمندر سے بلندی 15ہزار فٹ ہے۔ تبّت کو ’’دنیا کی چھت ‘‘ بھی کہا جاتا ہے۔ برف سے ڈھکے پہاڑوں اور دنیا کے بلند ترین …مزید پڑھیں

مکرم آفتاب احمد خان صاحب

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 31؍اکتوبر 2012ء میں مکرم ڈاکٹر عبدالباری ملک صاحب کا مضمون شامل اشاعت ہے جس میں مکرم آفتاب احمد خان صاحب سابق امیر جماعت احمدیہ برطانیہ کا ذکرخیر کیا گیا ہے۔ مکرم آفتاب احمد خان صاحب کا شمار ان چند خوش نصیب احمدیوں میں ہوتا ہے جنہوں نے وطن عزیز کی خدمت کر …مزید پڑھیں

مکرمہ ڈاکٹر فہمیدہ منیر صاحبہ

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ13؍اکتوبر 2012ء میں شائع ہونے والی ایک خبر کے مطابق محترمہ ڈاکٹر فہمیدہ منیر صاحبہ 6؍اکتوبر 2012ء کو کینیڈا میں 75 برس کی عمر میں برین ہیمرج سے وفات پاگئیں۔ حضورانور ایدہ اللہ نے 12؍اکتوبر2012ء کے خطبہ جمعہ میں مرحومہ کا ذکرخیر فرمایا اور بعدازاں نماز جنازہ غائب پڑھائی۔ حضورانور نے فرمایا کہ …مزید پڑھیں

مکرم عبدالرزاق بٹ صاحب مربی سلسلہ

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ11؍اکتوبر 2012ء میں شائع ہونے والی ایک خبر کے مطابق مکرم عبدالرزاق بٹ صاحب مربی سلسلہ 6؍اکتوبر 2012ء کو بعمر 65سال کسی غلط دوائی کے استعمال کے نتیجہ میں حرکت قلب بند ہوجانے سے وفات پاگئے۔ آپ موصی تھے۔ مکرم عبدالرزاق بٹ صاحب کے آباؤ اجداد کشمیر سے ہجرت کر کے آئے تھے۔ …مزید پڑھیں

مکرم محمد احمد صدیقی صاحب شہید

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 18؍ستمبر 2012ء میں شائع ہونے والی ایک خبر کے مطابق 15 و 16؍ستمبر 2012ء کی درمیانی رات مکرم محمد احمد صدیقی صاحب آف گلستانِ جوہر کراچی کو نامعلوم افراد نے شدید فائرنگ کرکے اُس وقت موقع پر ہی شہید کردیا جب وہ اپنے برادرنسبتی مکرم ملک شمس فخری صاحب کے ہمراہ اپنے …مزید پڑھیں

مکرم پروفیسر عبدالودود صاحب

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 24؍ستمبر 2012ء میں شائع ہونے والے ایک مضمون میں مکرمہ ب۔ودودصاحبہ نے سانحہ لاہور میں شہادت پانے والے اپنے شوہر مکرم پروفیسر عبدالودود صاحب کا ذکرخیر کیا ہے۔ حضرت عبدالحمید شملوی رضی اللہ عنہ کے پوتے اور مکرم عبدالمجید عاجز صاحب کے بیٹے مکرم عبدالودود صاحب کی عمر بوقت شہادت 55سال تھی۔ …مزید پڑھیں

مکرم مبارک محمود صاحب مربی سلسلہ

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 14 ستمبر 2012ء میں مکرم مظفر احمد درّانی صاحب کے قلم سے مکرم مبارک محمود صاحب مربی سلسلہ کا ذکرخیر شامل اشاعت ہے۔ قبل ازیں 22 جنوری 2016ء کے الفضل انٹرنیشنل کے اسی کالم میں مرحوم کا ذکرخیر کیا جاچکا ہے۔ مضمون نگار رقمطراز ہیں کہ مکرم مبارک محمود صاحب مربی سلسلہ …مزید پڑھیں

حضرت حکیم میر حسام الدین صاحبؓ

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 5 اور 6 ستمبر 2012ء میں مکرم غلام مصباح بلوچ صاحب نے اپنے ایک مضمون میں حضرت حکیم میر حسام الدین صاحب سیالکوٹیؓ کی سیرت و سوانح پر تفصیل سے روشنی ڈالی ہے۔ اللہ تعالیٰ نے قرآن کریم میں اپنے مامورین کی صداقت کے نشانوں میں ایک نشان اُن کے دعویٰ سے …مزید پڑھیں

اکاشی کیکیو برِج ۔جاپان

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ21ستمبر 2012ء میں جاپان میں واقع دنیا کے طویل ترین سسپنشن پُل کا تعارف پیش کیا گیا ہے جو ’کوبے‘شہر کو ’اواجی شیما ‘ جزیرے سے ملاتا ہے۔ اس پُل کی تعمیر مکمل ہونے سے قبل یہ اعزاز ڈنمارک کے گریٹ بیلٹ ایسٹ برج کو حاصل تھا جس سے یہ پُل 366میٹر لمبا …مزید پڑھیں

مکرم محمد نواز صاحب کی کراچی میں شہادت

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ14ستمبر 2012ء میں شائع ہونے والی ایک خبر کے مطابق 11؍ستمبر2012ء کومکرم محمد نوازصاحب آف اورنگی ٹاؤن کراچی کو نامعلوم افراد نے فائرنگ کرکے شہید کردیا۔ وہ محکمہ پولیس میں بحیثیت کانسٹیبل تھانہ پیر آباد (بنارس) میں تعینات تھے۔ وقوعہ کے روزرات 8بجے موٹرسائیکل پر ڈیوٹی پر جا رہے تھے کہ نامعلوم موٹرسائیکل …مزید پڑھیں

حضرت قاری غلام حٰمٓ صاحبؓ

حضرت اقدس مسیح موعودؑ کے صحابہ میں رسول پور ضلع گجرات سے تعلق رکھنے والے تین ایسے بھائی بھی شامل ہیں جو اپنے تقویٰ و طہارت، بلند اخلاق اور دینی خدمات کی وجہ سے ہمیشہ یاد رکھے جائیں گے یعنی حضرت قاری غلام حٰمٓ صاحب (جن کے بارہ میں مکرم غلام مصباح بلوچ صاحب کا …مزید پڑھیں

مکرم ڈاکٹر محمد اسلم جنجوعہ صاحب

روزنامہ ’الفضل ربوہ‘‘ 13؍ستمبر 2012ء میں مکرم رانا محمد ظفراللہ صاحب نے اپنے ماموں مکرم ڈاکٹر محمد اسلم جنجوعہ صاحب آف چک 98شمالی سرگودھا کا مختصر ذکرخیر کیا ہے۔ مرحوم کا ذکرخیر قبل ازیں 6؍جون 2014ء کے الفضل انٹرنیشنل کے اسی کالم میں شائع ہوچکا ہے۔ مکرم ڈاکٹر محمد اسلم جنجوعہ صاحب ایک معروف شخصیت …مزید پڑھیں

محتر م عبدالرشید ملک صاحب شہید

روزنامہ ’الفضل ربوہ‘‘ 8ستمبر 2012ء میں محترم عبدالرشید ملک صاحب کا ذکرخیر اُن کی اہلیہ مکرمہ الف۔ وسیم صاحبہ کے قلم سے شامل اشاعت ہے۔ محترم عبدا لرشید ملک صاحب نے 28؍ مئی 2010ء کو دارالذکر لاہور میں شہادت کی سعادت پائی۔ آپ حضرت عبدالحمید ملک رضی اللہ عنہ کے ہاں 20؍ اکتوبر 1946ء کو …مزید پڑھیں

محترم نواب دین صاحب آف تہال

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ10 ستمبر 2012ء میں شائع ہونے والے ایک مضمون میں مکرم ظفر احمد ظفر صاحب نے اپنے والد محترم نواب دین صاحب آف تہال (کشمیر) کا ذکرخیر کیا ہے۔ محترم نواب دین ولد عبد النبی صاحب قریباً 1919ء میں پیدا ہوئے۔ آپ کے والدین کی وفات 1924ء میں پھیلنے والی طاعون سے ہوگئی …مزید پڑھیں

مکرم راؤعبدالغفار صاحب کی شہادت

روزنامہ ’الفضل ربوہ‘‘ 8ستمبر2012ء میں مکرم راؤ عبدالغفار صاحب کی شہادت کی خبر شائع ہوئی ہے جنہیں 6ستمبر 2012ء کو کراچی میں نامعلوم افراد نے فائرنگ کرکے اُس وقت شہید کردیا جب آپ سکول سے گھر واپس جانے کے لئے شام پانچ بجے بس میں سوار ہونے ہی والے تھے۔ آپ چاکیواڑہ میں سکول ٹیچر …مزید پڑھیں

دنیا کا دوسرا بڑا دریا: دریائے ایمیزون (جنوبی امریکہ)

روزنامہ ’الفضل ربوہ ‘‘ 20ستمبر 2012ء میں دنیا کے دوسرے بڑے دریا، دریائے ایمیزون، کا تعارف شائع ہوا ہے۔ دنیا کا سب سے بڑا دریا نیل ہے۔ دریائے ایمیزون (Amazon) پَیرو کے انڈس سے نکل کر جنوبی امریکہ میں قریباً 6337کلومیٹر تک بہنے اور پچیس لاکھ مربع میل کے رقبے کو سیراب کرنے کے بعد …مزید پڑھیں

جنرل اختر حسین ملک (ہلال جرات) کو کمانڈ سے ہٹانے کا واقعہ

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 13؍اگست 2012ء میں ایک مضمون (مرتبہ: پروفیسر راجا نصراللہ خان صاحب) شامل اشاعت ہے جس میں ’فاتح چھمب‘ جنرل اخترحسین ملک کو کمان سے ہٹانے کے واقعہ کا تجزیہ کیا گیا ہے۔ ٭ پاکستان کے سینئر صحافی جناب شریف فاروق اپنی کتاب ’’پاکستان میدان جنگ میں‘‘ میں رقمطراز ہیں کہ یکم ستمبر …مزید پڑھیں

جنرل عبدالعلی ملک (ہلال جرأت)

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 13؍اگست 2012ء میں پاکستانی فوج کے احمدی سپوت جنرل عبدالعلی ملک صاحب کا مختصر تذکرہ شامل اشاعت ہے۔ ستمبر1965ء کی جنگ کا دوسرابڑا محاذ سیالکوٹ کا تھا جہاں چونڈہ کے محاذ پر ہندوستانی ٹینکوں کی زوردار یلغار کو ایک معمولی سی تعداد کے ساتھ پاکستان کی مسلح افواج کے بریگیڈیئر عبدالعلی ملک …مزید پڑھیں

وقت کی اہمیت۔دینی و دنیاوی نقطۂ نگاہ سے

روزنامہ ’الفضل ربوہ ‘‘ 30جولائی 2012ء میں مکرم ندیم احمد فرخ صاحب کا وقت کی اہمیت کے حوالہ سے ایک مضمون شامل اشاعت ہے۔ وقت ضائع کرنا ایک ناقابلِ تلافی نقصان ہے کیونکہ جو وقت گزر جاتا ہے وہ کبھی واپس نہیں آتا۔ چنانچہ اللہ تعالیٰ قرآن کریم میں اس انسانی خواہش کا ذکر فرماتا …مزید پڑھیں

پیٹروناس ٹاورز۔ ملائشیا

روزنامہ ’الفضل ربوہ ‘‘ 25جولائی 2012ء میں کوالالمپور میں تعمیر کئے جانے والے ملائشیا کی صنعتی ترقی کی علامت پیٹروناس ٹاورز کا تعارف شاملِ اشاعت ہے۔ 15؍اپریل 1996ء کو تکمیل کے بعد ان ٹاورز کو دنیا کی بلند ترین عمارت کہلانے کا اعزاز حاصل ہوا۔ لیکن 17؍اکتوبر 2003ء کو تائیوان میں تعمیر ہونے والا 1676 …مزید پڑھیں

جزیرہ مالٹا

بحراوقیانوس میں یورپ اور شمالی افریقہ کے درمیان واقع جزیرہ مالٹا ہے جس کا رقبہ 122 مربع میل ہے جبکہ آبادی قریباً چار لاکھ ہے۔ یہاں کے باشندے نسلاً اہل قرطاجنہ سے ہیں اور مذہباً کیتھولک عیسائی ہیں۔ بعض مؤرخین کے مطابق ہزاروں سال پرانی تحریروں میں بھی اس جزیرے کا ذکر ملتا ہے ۔ …مزید پڑھیں