ہم جسم ہیں اور جان خلافت میں ہے اپنی – نظم

روزنامہ ’’الفضل‘‘ ربوہ 2جولائی 2008 ء میں مکرمہ ارشاد عرشی ملک صاحبہ کا کلام شامل اشاعت ہے۔ اِس کلام میں سے انتخاب ہدیۂ قارئین ہے:

ہم جسم ہیں اور جان خلافت میں ہے اپنی
زندہ ہمیں کر دیتا ہے عنوانِ خلافت
اس سائے میں عافیت و آرام بہت ہے
تاحدِ زمیں پھیلا ہے دامانِ خلافت
اک تار میں بکھرے ہوئے دانوں کو پرویا
کچھ کم تو نہیں ہم پہ یہ احسانِ خلافت
میں چاہوں بھی گننا تو نہ گن پاؤں گی ہرگز
بارش کی طرح برسے ہیں فیضانِ خلافت
یہ نعمتِ عظمیٰ ہے یہ بخشش ہے خدا کی
منہاج نبوت میں نہاں جانِ خلافت

پرنٹ کریں
یہ مضمون شیئر کرنے کے لئے یہ چھوٹا لنک استعمال کریں۔ جزاک اللہ [http://mahmoodmalik.zindgi.uk/D7sHN]

اپنا تبصرہ بھیجیں